قومی سطح پرموجودہ معاشی مسائل اورکاروباری صورتحال کے تناظر میں رئیل اسٹیٹ بزنس کی بحالی کےلئے ایمنسٹی سکیم کے اجراء(جنرل پبلک کےلئے اثاثہ جات ظاہر کرنے کی صورت میں 1%یا2% وصولی) سے رئیل اسٹیٹ بزنس کی بحالی ممکن نہیں، بزنس کی بحالی کےلئے مثبت انداز میں ترغیبات، مراعات، سہولیات اور آسانیاں فراہم کرتے ہوئے باقاعدہ طور پر رئیل اسٹیٹ ریگولیٹری کے قیام ، ٹیکس ریفارمز کمیشن کی تشکیل ، نان فائلر کو جائیداد خریدنے کی اجازت، وفاقی وصوبائی حکومت کی طرف سے بھاری ٹرانسفر اخراجات جوکہ تقریباً 8%سے10%ہیں ان میں کمی،کرتے ھوے مجموئی اخراجات 3%سے5% کر دیے جائیں تو رئیل اسٹیٹ بزنس بحال ھو گا تو رئیل اسٹیٹ بزنس کی بحالی،کاروباری سرگرمیاں اور ٹرانزیکشن والیم بڑھنے سے حکومت کے ریونیو میں اضافہ ہوگا،قومی اور عالمی سطح پر معیشت کی مضبوطی اور حکومت کی نیک نامی کا باعث بنے گا۔